مرکز

کہرآلود کرشمے

الاسکا میں واقع مِسٹی فیورڈ نیشنل مونیو منٹ قدیم قدرتی حسن اور گوناگوں جنگلاتی زندگی کا مسکن ہے۔

دنیا کے خوبصورت ترین اور وسیع ترین قطعات اراضی میں سے ایک  مِسٹی فیورڈ نیشنل مونیومینٹ کی تعریف جن بہترین الفاظ میں کی جا سکتی ہے وہ ہیں ناہموار ، دور افتادہ اور انتہائی قدیم۔یہ الاسکا میں واقع ہے۔مِسٹی فیورڈ تقریباََ ۷ ملین ہیکٹڑ رقبے میں واقع ٹونگاس قومی جنگلات کا ایک حصہ ہے جو ۸ لاکھ ۴۰ ہزار ہیکٹر سے زیادہ علاقے میں پھیلا ہوا ہے اور آج تک انسانی لمس سے بہت حد تک اچھوتا ہے۔اسے دیکھنے کے لیے آنے والوں کو پُر امارت ساحلی ماحولیاتی نظام ، بارش کے گھنے جنگلات ، معدنیات سے بھرے ہوئے جھرنے اور آتش فشانی سرگرمی دیکھنے کو ملتی ہے۔چوں کہ یہ دور افتادہ مقام پر واقع ہے اس لیے اس انتہائی شاندارسر زمین کا سفر کرنے والوں کو انعام کے طور پر انتہائی شاندار مناظر ، قدیم آبی ذخائر اور نادر و ختم ہونے کے خطرے سے دوچارجنگلاتی زندگی دیکھنے کے ختم نہ ہونے والے مواقع ملتے ہیں۔ اس یادگار کا نظم یو ایس فاریسٹ سروس کرتی ہے جو کہ امریکی محکمۂ ذراعت کی ایک ایجنسی ہے۔ 

صدرجِمی کارٹر نے ۱۹۷۸ء میں اسے قائم کیا تھا ۔ قومی یادگار کا درجہ ملنے سے اسے ماحولیاتی ، تاریخی، سائنسی اور بیابانی تحفظات کی سہولت حاصل ہے۔ 

یہاں کا دورہ کرنے کے لیے ایک مہم جو روح اور آبی یا ہوائی سفر کے لیے مناسب معدہ کی ضرورت پڑتی ہے کیوں کہ یہاں تک صرف تیرنے والے طیاروں یا کشتی کے ذریعہ ہی پہنچا جا سکتا ہے۔ یہاں سیر کے لیے آنے والوں کو مشورہ دیا جاتا ہے کہ وہ اکیلے سفر پر نکلنے کی بجائے کشتی کے ذریعہ گائڈ کی راہنمائی میں ٹور کریں کیوں کہ یہاں پانی کی موجیں ناقابل قیاس ہیں اور طوفان آن کی آن میں اٹھ سکتا ہے۔ بہم نہر اس یادگار کے قلب تک پہنچنے سے پہلے لمبی، گہری، پتلی آبنایوںاور کھڑی دیواروں والی گھاٹیوں کے درمیان سے گزرتی ہے ۔یہاں کا پانی نمکین اور مٹھاس کا آمیزہ ہے جس کی وجہ سے یہاں گوناگوں مچھلیوں اور چڑیوں کی افراط پائی جاتی ہے۔

یہاں دستیاب تفریحی سرگرمیوں میں خیمہ زن ہوکر نظاروں کا لطف لینا ، کوہ نوردی ، شکار ، ماہی گیری اور کشتی رانی شامل ہیں۔ یہاں آنے والے مہمان چاہیں تو متعدد مختلف مقامات جیسے کہ سمندروں کے ساحل پر اور اونچی پہاڑی جھیلوں کے کنارے واقع کیبن کرایہ پر لے سکتے ہیں۔کسی جھیل کے کنارے واقع کیبن میں رہیں یا کسی سمندرکے کنارے واقع کیبن میں،مہمانوں کو اس یادگار کے گرد گھومنے کے لیے چھوٹی کشتیاں یا کرایہ پر تیرنے والے پیپے مل جاتے ہیں ۔ کیبن کو کم از کم ۱۸۰ دن پہلے ریزرو کروا لیا جاتا ہے۔

کیبنوں کے علاوہ، ایسے سیاح جو زیادہ دیہاتی قیام گاہوں کا برا نہیں مانتے، چاہیں تو  منزا نیٹا بے، نویا بے، پنچ پاول لیک اور  وِنس ٹینلی لیک سمیت اس یادگار کی متعدد جھیلوں اور کھاڑیوںکے کنارے واقع مسکنوں میں کسی معاوضے کے بغیر رہ سکتے ہیں۔ کیبنوں کی طرح یہ قیام گاہیں پہلے آئیں پہلے پائیں کی بنیاد پر دستیاب ہوتی ہیں ۔ ان کے لیے ریزرویشن ضروری نہیں۔

سیاح چاہیں تو اس یادگار میں اپنا خیمہ لگا سکتے ہیں ۔ یہاں کہیں بھی ایسا کوئی جما جمایا کیمپ سائٹ نہیں جہاں غسل خانہ ہو ، بہتا ہوا پانی ہو یا ایسے گڑہیں ہوں جہاں آگ لگائی جا سکے۔ اس کے قلب کا سفر شروع کرنے سے پہلے ، خاص کر اس صورت میں جب کیمپ لگانا یا مسکن کو حاصل کرنا دل کو زیادہ چھونے والے متبادلات لگیں ، تو قریب ترین شہر کیچی کِن سے لازمی اشیاء کی خریداری ضرور کر لینی چاہئے۔

جیسا کہ نام سے ظاہر ہے ، مِسٹی فیورڈ ایک مرطوب مقام ہے جہاں سال بھر کافی بارش ہوتی ہے ، جاڑوں میں بھاری برف گرتی ہے اور بار بار کہاسا چھا جا تا ہے جس کی وجہ سے یہ ایک نم اور سر سبز مقام ہے۔ 

یہاں کے ایسے موسم اور قریب ترین شہر سے بھی کافی دوری کی بنا پر حیرانی نہیں ہوتی کہ اس یادگار میں جنگلاتی زندگی پنپ رہی ہے۔یہاں آنے والے مہمان ساحلوں کے قریب سفید سر والے عقابوں کے گھونسلے دیکھ سکتے ہیں جہاں کہ وہ قریب سے گزرنے والی کشتیوں کی نگاہوں کے سامنے اپنے بچوں کی پرورش کرتے ہیں۔ 

یہاں زمین پر رہنے والے جانوروں جیسے کہ بھورے اور کالے ریچھ ، ہرن ، بھیڑیے اور کوہستانی بکرے مسلسل نظر آتے ہیں۔پانی میں سانپ، مچھلی ، وہیل ، سمندری گھوڑے اور سیل اکثر نظر آتے ہیں۔ ان کے علاوہ نمکین اور میٹھے پانی میں پیدا ہونے اور پلنے والی مچھلیوں کی دوسری بہت سی قسمیں بھی اس علاقے میں پائی جاتی ہیں۔

جو لوگ اس خطۂ ارض کو دیکھنے کو ترجیح دیتے ہیں ان کے لیے یہاں کے بارش والے جنگلات میں بناتات کی بھی کمی نہیں۔ ویسٹرن ہیملوک،سِٹکا اسپروس اور دیودار کے درخت اس فراواں سبزہ زار پر غالب ہیں اور اس علاقے میں کو ہ نوردی کے لیے مخصوص مختلف پگڈنڈیوں پر چل کر انہیں تلاش کیا جا سکتا ہے۔ 

ایسا کہا جاتا ہے کہ الاسکا شمالی امریکہ کے اکتشاف طلب، غیر ضائع شدہ پانیوں اور اراضی کی آخر سرحد ہے۔ ٹو نگاس نیشنل فاریسٹ ،خاص خر مِسٹی فیورڈ نیشنل مونیو مینٹ میں داخل ہونے کے سفر کا آغاز حقیقی معنوں میں فطرت کی خالص ترین تخلیقات کی لامحدود وسعت میں قدم رکھنے کے برابر ہے۔ 

 

میگن میک ڈریو کیلی فورنیا کے شہر سانتا کروز میں واقع یونیورسٹی آف کیلی فورنیا اور کیلی فورنیا کے ہی ہارٹ نیل کالج میں عمرانیات کی پروفیسر ہیں۔ وہ کیلی فورنیا کے مونٹیرے علاقے میں رہتی ہیں۔ 

 

تبصرہ کرنے کے ضوابط