مرکز

پَوپ کلچر کی جستجو

 سیئٹل میں واقع دی میوزیم آف پَوپ کلچر بعض سب سے زیادہ مشہور ثقافتی اصنام اور مظاہر کی جھلک پیش کرتا ہے۔

جمی ہینڈرِکس۔ اسٹار وارس۔ دی وزارڈ آف اوز۔ روی شنکر۔پرنس۔

ریاست واشنگٹن کے سب سے بڑے شہر سیئٹل میں موجود  میوزیم آف پَوپ کلچر (ایم اوپَوپ )میں دنیا کی اہم ثقافتوں کی بعض سب سے بڑی کسوٹیوں سے ایک ہی چھت کے نیچے رو برو ہوا جا سکتا ہے۔میوزیم  سیئٹل سینٹر میں واقع ہے جو شہرکی ایسی جگہوں میں سے ایک ہے جہاں لوگ بکثرت آتے ہیں۔پہلے پہل اس کا قیام مائیکروسافٹ کے شریک بانی اور کھرب پتی انسان دوست  پَول اَیلن کے یکجا کیے گئے فنون لطیفہ کے وسیع مجموعے سے تعلق رکھنے والی بعض اشیاء اور قابلِ ذخیرہ چیزوں کو رکھنے کی غرض سے عمل میں آیا تھا۔ 

آج  فرینک گیری کے ذریعہ ڈیزائن کیا گیا یہ میوزیم نہ صرف آنجہانی اَیلن کی متعدد دلچسپیوں کو ایک خراج عقیدت ہے بلکہ دلچسپی کے کئی دیگر شعبوں میں منقسم بھی ہے۔                                                                                                                                                                                                                       

میوزیم کی دیکھ بھال سے متعلق امور کے ڈائریکٹر  جیکب میک مرے باخبر کرتے ہیں ’’جب ہمارے بانی   پَول اَیلن  نے پہلی بار  جِمی ہینڈرِکسکو ان کے۱۹۶۷ ء کے البم  آر یو ایکسپیرینسڈ ؟میں سنا تو انہوں نے جوش و خروش اور مسرت کے ملے جلے احساسات کے ساتھ میوزیم آف پَوپ کلچر قائم کرنے کا خیال پالا۔ اصل میںوہ ہینڈرِکس کے لیے وقف ایک عجائب گھرکے قیام میں دلچسپی رکھتے تھے۔ ۱۹۹۰ء کے اوائل میں اس پر کام شروع ہوا۔ چند برسوں کے بعد اس میں امریکی پَوپ موسیقی کو بھی شامل کرنے کے لیے ہم لوگوں نے عجائب گھر کے دائرے کو وسعت دی ۔اورسنہ ۲۰۰۰ء  میں ایکسپیرینس میوزک پروجیکٹ کا آغاز کیا ۔‘‘ 

اَیلن نے جیسے ہی  اسٹار ٹریک جیسی مقبول سیریز سے متعلق دیگر سامان اور ملبوسات حاصل کیے ، میوزیم کے محافظوں کو احساس ہوگیا کہ میوزیم کا دائرہ صرف موسیقی تک محدود نہیں رہا۔چنانچہ ان لوگوں نے ۲۰۰۴ ء میں عمارت کا نصف حصہ  سائنس فکشن میوزیم اور  ہال آف فیم میں تبدیل کر دیا۔ 

میک مرے کہتے ہیں ’’ موسیقی اور سائنس فکشن کے ان دو مالامال مراکز کے ساتھ ہم لوگ اس وقت تک اسے وسعت دیتے اور نئے دائرۂ فکر کی تلاش کرتے رہے جب تک یہ واضح نہیں ہو گیا کہ ہمیں مزید تبدیلی کی ضرورت ہے۔ ۲۰۱۶ ء آتے آتے ہماری شہرت میوزیم آف پاپولر کلچر کے طور پر ہو گئی اور ہم ہمیشہ وسعت پذیر، پرانے طرز کے ، پُر جوش اور مقبول ثقافتی حلقے کی جستجو میں منہمک ہو گئے۔ اپنے قیام کے وقت سے اب تک ہم لوگوں نے موسیقی، سائنس فکشن، تصور، خوف،فیشن ،کھیل کود، فلم، ویڈیو گیمس، کامکس اور دیگر موضوعات پر مبنی تقریبا ۱۰۰ نمائشوں کا اہتمام کیا ہے ۔ ‘‘  

میوزیم میں واقع دائمی ہال آف فیم نمائش میں دنیا کی مقبول ترین اور معروف ترینفرینچائزی  (حکومت یا کسی کمپنی کی جانب سے کسی فرد یا گروپ کو مخصوص تجارتی سرگرمی کی اجازت ) کے نمونوں کورکھا گیا ہے۔ موجودہ نمائشیں  پرنس، نِروان ، کوین اور پرل جیم  جیسے موسیقاروں اور بینڈکے کاموں سے اور ان کی زندگیوں سے واقفیت کا موقع فراہم کرتی ہیں ۔ اس کے علاوہ یہ نمائشیں تصورات، سائنس فکشن اورہولناک فرینچائزی کی تحقیق کا بھی پتہ دیتی ہیں اور یہ جاننے کا موقع فراہم کرتی ہیں کہ مختلف قسم کے گیم کو آزادانہ طور پر تیار کرنے کے کیا معنی ہیں۔ یہاں باقاعدگی سے آنے والے سیاح  لارڈ آف دی رِنگس کے ہتھیاروں،مَورک اینڈ مائنڈی سے مَورک کے خلائی لباس اورہینڈرِکس کے پاسپورٹ کو دیکھنے کا موقع حاصل کر سکتے ہیں۔اس عجائب گھر میں ہینڈرِکس کے تقریباََ ۲۰۰ ذاتی ریکارڈ بھی موجود ہیں جن میں پنڈت روی شنکر اوراستاد اللہ رکھاکا  ساؤنڈ آف دی ستار اور ایم ایس سبّو لکشمی کا  دی ساؤنڈ آف سبّو لکشمیشامل ہیں۔ 

اس میوزیم کی بعض مقبول نمائشیں جیسے اسٹار ٹریک : ایکسپلورِنگ نیو ورلڈساور  بووی بائی مِک رَوک تو اب ان لوگوں کے لیے دنیا بھر کا سفر کر رہی ہیں جو سیئٹل میں آکر ان چیزوںسے لطف اندوز نہیں ہو سکتے۔ 

میوزیم کی ویب سائٹ پر درج ہے ’’ میوزیم آف پَوپ کلچر کا مقصد ان تجربات کی پیش کش کے ذریعے تخلیقی اظہار کو زندگی میں تبدیلی کی طاقت بنانا ہے جو تحریک کا باعث بنتے ہیں اور طبقات کے درمیان رابطے کا کام کرتے ہیں۔‘‘

جب کہ میک مرے کہتے ہیں ’’ ہم لوگ ان غیر معمولی نمائشوں او ر پروگراموں کا اہتمام کرکے اپنے مقاصد کو فروغ دیتے ہیں جو ذاتی تخلیقیت کو نمایاں کرتے ہیں اور ہمارے سیاحوں کے پَوپ کلچر کے جذبے کی اور ان کی مہارت کی عکاسی کرتے ہیں۔ ‘‘

میوزیم آف پَوپ کلچر کی اپیل کا ایک حصہ یہ بھی ہے کہ یہ ہر عمر اور ہر قسم کی دلچسپی رکھنے والے لوگوں کے لیے مختلف قسم کی نمائشوں اور پروگراموں کے اہتمام کی کوشش کرتا ہے۔میک مرے کہتے ہیں ’’ ہمارا میوزیم ایک نایاب اور غیر معمولی میوزیم ہے جہاں ایسی کوئی نہ کوئی شئے ضرور ملے گی جسے گھر کا ہر فرد پسند کرے۔اپنی فطرت میں پَوپ کلچر تجربات اور ان تقریبات پر مبنی ہوتا ہے جن کا اشتراک ہم سب کرتے ہیں اور انہیں قدر کی نگاہوں سے دیکھتے ہیں۔ اس مشترکہ ثقافت کی تلقین نہیں کی جاسکتی مگر اسے عوام کے ذریعے اور عوام کے لیے پیدا ضرور کیا جا سکتا ہے۔ ایک عجائب گھر کے طور پر ہم لوگ یہ محسوس نہیں کرتے کہ ہم سیاحوں سے کہیں کہ ثقافت میں کیا اہم ہے بلکہ سیاح خود پہلے سے ہی اس بات سے واقف ہیں کہ کون سی چیز اہم ہے۔ بس ہم ان معلومات کی ان کے لیے عکاسی کرتے ہیں ۔‘‘

میوزیم ہی میں ایک دکان کے علاوہ وہاں ایک شہری کیفے، ایک شراب خانہ،  وولف گینگ پَککے زیر اہتمام  کلچر کچن سیئٹل ،نگارخانے، انتظار گاہیں، علمی تجربہ گاہیں اور سیاحوں کے تجربات کے لیے زیادہ سے زیادہ جگہیں بھی موجود ہیں۔میوزیم سال بھر مختلف قسم کے پروگرام کا اہتمام کرتا رہتا ہے ۔یہاں ہونے والی تقریبات میں ایم اوپَوپ کانفرنس (جہاں ماہرین ِتعلیم ، نقاد، شائقین اور موسیقار یکجا ہوتے ہیں)، میوزیم کے اندر ہی واقع جے بی ایل تھیئٹر میںمیوزیم آف پَوپ کلچر فلم سیریز میں فلموں کی نمائش، ایک کیمپ آؤٹ سنیما سیریز جس کے لیے میوزیم کے بہت بڑے اسکائی چرچ میں ۶۰ انچ چوڑی اور ۳۳ انچ اونچی ایچ ڈی لیڈ اسکرین کا استعمال کیا جاتا ہے۔ یہاں معمولی چیزیں ، موضوعات پر مبنی مشروبات اور تحائف تو دستیاب ہوتے ہی ہیں ،موسیقی کے پروگراموں اور تحریری مقابلوں کا انعقاد بھی ہوتا ہے۔ 

 

کینڈس یاکونو جنوبی کیلی فورنیا میں مقیم قلمکار ہیں جو جرائد اور روزناموں کے لیے لکھتی ہیں۔  

 

تبصرہ کرنے کے ضوابط