مرکز

خلا کی سیر

سیاح اسپیس سینٹر ہیوسٹن میں نمائشوں ، تقریبوں اور سیکھنے کے موقعوں کے ذریعے سائنس اور خلا کے عجائبات کی سیاحت کا لطف لے سکتے ہیں ۔

تاریخ نظامِ کائنات سے انسان کی محبت کی طویل عرصے سے گواہ رہی ہے۔ دی اسپیس سینٹر ہیوسٹن  اس مستقل عجوبے اور خلائی دنیا میں انسان کی یورشوں کو ایک خراج عقیدت ہے۔بہت سارے لوگوں کے لیے ہیوسٹن کا دورہ اس وقت تک نا مکمل ہے جب تک وہ اسپیس سینٹر نہیں جاتے۔ اسمتھ سونین افیلیئٹ ہونے کی وجہ سے یہ میوزیم   ناسا جانسن اسپیس سینٹرکا بھی ایک رسمی سیاحتی مرکز ہے۔چوں کہ میوزیم خلا اور سائنسی تحقیق کا ایک ایسا مرکز ہے جہاں ۴۰۰ سے زیادہ چیزیں دیکھنے اور کرنے کو ہیں ، اس لیے پوری دنیا سے ۲ لاکھ ۵۰ ہزار سے زیادہ اساتذہ اور طلبہ ہر سال یہاں کا دورہ کرتے ہیں ۔ یہ ایک تصدیق شدہ  آٹِزم سینٹر بھی ہے۔ کل ملاکر یہاں ہر برس ۱۰ لاکھ سے زیادہ سیاح آتے ہیں جس کی وجہ سے  گریٹر ہیوسٹن ایریا میں تقریباََ ۷۳ ملین ڈالر کی معاشی سرگرمیاں انجام پاتی ہیں۔ 

 

خلا ئی تاریخ کو دستاویزی شکل دینا 

اسپیس سینٹر ہیوسٹن ایسی جگہ ہے جہاں خلا بازوں کے خصوصی لباس اور چاند کی سطح سے لائی گئی چٹانوں کے دنیا کے سب سے بڑے ذخیروں میں سے ایک موجود ہے۔مثال کے طور پر اس کی اسٹارشپ گیلری میں کئی بار پروازکر چکے خلائی طیارے اور بہت سارے حیرت انگیز نمونے موجود ہیں جو خلا ئی تحقیق کی تاریخ کا پتہ دیتے ہیں۔اس کے علاوہ گیلری میں اپولو ۱۷کمانڈ ماڈیول اور چاند کی ایک چٹان موجود ہے ۔ یہاں آنے والے تمام سیاحوں کی حوصلہ افزائی کی جاتی ہے کہ وہ اسے دیکھیں اور چھوئیں۔ یہاں ایک بڑا اسکائی لیب ٹریننگ ماڈیول بھی ہے جسے خلا میں لمبے عرصے تک رہنے اور کام کرنے کے طریقوں کو فروغ دینے کے لیے سیٹرن فائیوراکٹ کے آخری مرحلے سے تیار کیا گیا ہے۔

ان مہمات پر کام کرنے والے لوگ اپنی زندگیوں اور عادتوں میں بصیرت کی وجہ سے کافی معروف ہیں۔مثال کے طور پرجیمنی اور  اپولو پروگرام کے  فلائٹ ڈائریکٹر یوجین کرینز نے خوش بختی کی غرض سے اپنی اہلیہ کے ہاتھ سے تیار رنگین واسکٹ پہنا تھا۔ اسپیس سینٹر کی ویب سائٹ پر درج ہے ’’اپولو ۱۳ پر تین خلانوردوں کی بازیابی سمیت کرینز کی کامیابیوں کے ریکارڈ کے  پیش نظر ایسا معلوم ہوتا ہے کہ جس مقصد کے لیے مذکورہ واسکٹ کو تیار کیا گیا تھا اس کی تکمیل ہوگئی۔ ‘‘

کرینز کے معروف اپولو۱۷  واسکٹ کو اسٹار شپ گیلری ٹائم لائن میں دیکھا جاسکتا ہے۔ حال ہی میں یہاں کا دورہ کرنے والے سیاح  کرس ڈبلیو نے  ٹرپ ایڈوائزر کے اپنے جائزے میں لکھا ہے ’’یہ نمائشیں حیرت انگیز تھیں اور میں نے ان تمام نمائشوں کی صداقت کو پسند کیا جنہیں مجھے وہاں دیکھنے کا موقع ملا ۔ سٹرن فائیوکو وہاں جاکر دیکھنے کا مزہ کچھ اور ہی تھا۔ اس کی جسامت حیرت انگیز تھی۔ ‘‘

اسپیس سینٹر نے اس سال کے شروع میں  ناسا ٹرام ٹورس ٹو راکٹ پارک اور اپولو مشن کنٹرول سینٹر سمیت خلا سے متعلق مختلف سرگرمیوں کے ذریعے اپولو کے دورکی وراثت اور خلائی تحقیق کے مستقبل کا جشن منایا۔اس کے علاوہ اس میں معروف مقررین کی تقریریں، کتابوں پر مصنف کے دستخط کے پروگرام، کنسرٹ کے ساتھ ایک   آؤٹ ڈور فیسٹیول اور عملی سرگرمیوں کے ساتھ فیملی اسٹیم زون، روبوٹِکس چیلینج اور اپولو کے موضوع پر مبنی سیکھنے کے تجربات بھی شامل ہیں۔

 

جشن برائے اسٹیم 

اسپین سینٹر ہیوسٹن کالرننگ اننوویشن سینٹر ،امریکہ کے سائنسی تعلیم کے نمایاں وسائل میں سے ایک ہے۔ بچوں اور نوجوانوں کو سنجیدگی سے غور و فکر اور امریکہ کے خلائی پرواز کے پروگرام کے ماضی، حال اور مستقبل کو سیکھنے میں مدد کے لیے اوردنیا کی ایک وسیع سمجھ کے لیے قومی سائنس کے معیارات پر مبنی مختلف پروگرام یہاں تیار کیے جاتے ہیں۔ان پروگراموں میں اسٹیم شعبہ جات پر توجہ دی جاتی ہے۔ بچوں کو مریخ پر چلنے والے پہلے انسانوں میں شامل کرنے کی تحریک دینے کے لیے بچوں پر مبنی اس کے تعلیمی پروگرام تیار کیے جاتے ہیں۔ خواہش مند خلا نورد میوزیم میں شب گزاری بھی کر سکتے ہیں اوراسٹیم شعبہ جات کی صلاحیت سازی کے لیے پُر جوش اور پروگرام پر مبنی عملی سرگرمیوں پر کام کرسکتے ہیں ۔ 

میوزیم میں قابل رسا ئی تعلیمی کیمپ کے تجربات حاصل کرنے کا بھی اہتمام ہے ۔اس طرح کے کیمپ خصوصی طور پر ۴ بر س اور اس سے بڑی عمر کے بچوں کے لیے منعقد کیے جاتے ہیں۔ یہ ان بچوں کے لیے ہیں جوسیکھنے کے اس ماحول سے فائدہ اٹھا سکتے ہیں۔انہیں ایسے بچوں کے لیے تیار کیا جاتا ہے جن کو سیکھنے میں دقت محسوس ہوتی ہے ۔ مثال کے طور پر  دی مارس فور ایوری ون کیمپ کا مشورہ ایسے بچوں کو دیا جاتا ہے جو فکری طور پر یا نشو و نما کے حساب سے کمزور واقع ہوتے ہیں۔ 

اسٹیم لرننگ کو قابل حصول بنانے میں بڑھتی ہوئی ضرورت کی تکمیل کے لیے اسپیس سینٹر ہیوسٹن کو اس طور پر وسعت دی جارہی ہے کہ لوگ خلائی تحقیق اور اس کے منفرد تجربات کے بارے میں جان پائیں اور انہیں سیکھ پائیں۔ اس نے تفاعلی تجربے کے لیے ایک مفت موبائل فون اَیپ کا آغاز بھی کیا ہے۔ مختلف زبانوں میں دستیاب اس اَیپ میں خود ہدایتی مجازی دورے، فروزاں حقیقی تجربات ، میوزیم کے بارے میں معلومات، تازہ ترین خبریں ، خلائی تحقیق میں تاریخی فتوحات اور خلائی تحقیق کے مستقبل کے بارے میں صوتی اور بصری کہانیاں جیسی خصوصیات شامل ہیں۔ 

 

پارومیتا پین رینو میں واقع یونیورسٹی آف نیواڈا میں گلوبل میڈیا اسٹڈیز کی معاون پروفیسر ہیں۔ 

 

تبصرہ کرنے کے ضوابط